Saturday, May 15, 2021
spot_img

کورونا سے متاثرہ خاتون ڈاکٹر کی مرنے سے قبل آخری پوسٹ

’شاید یہ میری آخری صبح ہو‘ کی پوسٹ سوشل میڈیا پر شیئر کرنے کے چند گھنٹے بعد ہی بھارت کی ایک خاتون ڈاکٹر کورونا وائرس کی وجہ سے ہلاک ہوگئی۔

بھارتی میڈیا رپورٹس کے مطابق حال ہی میں کورونا وائرس کی وجہ سے ہلاک ہوجانے والی 51 سالہ ڈاکٹر منیشا جادھو نے اپنی موت سے چند گھنٹے قبل اپنے فیس بُک اکاؤنٹ پر ایک پوسٹ شیئر کی تھی۔

ڈاکٹر منیشا جادھو نے اپنی فیس بُک پوسٹ میں لکھا کہ ’شاید یہ میری آخری صبح ہو اور شاید اس پلیٹ فارم پر میری آپ سے آخری ملاقات ہو۔‘

کورونا سے ہلاک ہونے والی خاتون ڈاکٹر نے لکھا کہ ’تمام لوگ اپنا خیال رکھیں۔‘

اُنہوں نے مزید لکھا کہ ’جسم مرجاتا ہے لیکن روح نہیں کیونکہ روح لافانی ہے۔‘

فیس بُک پر یہ جذباتی پوسٹ شیئر کرنے کے چند گھنٹے بعد ہی ڈاکٹر منیشا جادھو کورونا وائرس سے لڑتے ہوئے اپنی جان کی بازی ہار گئیں۔

واضح رہے کہ بھارت میں کورونا وائرس کی دوسری لہر کے آگے ملک کا صحت کا نظام ناکام ہوگیا، اسپتالوں میں کورونا مریضوں کے لیے جگہ کم پڑ گئی، لوگ آکسیجن کی عدم فراہمی پر جان سے جانے لگے۔

1 ارب سے زائد آبادی والا ملک بھارت کورونا وائرس کے مریضوں کی تعداد کے حوالے سے ایک بار پھر دوسرے نمبر پر آ گیا ہے، جہاں اس وائرس سے 1 لاکھ 86 ہزار 928 ہلاکتیں ہو چکی ہیں جبکہ اس سے متاثرہ 1 کروڑ 62 لاکھ 63 ہزار 695 مریض سامنے آ چکے ہیں۔

Advertisementspot_img

Related Articles

Stay Connected

148,181FansLike
8,890FollowersFollow
1,236SubscribersSubscribe
- Advertisement -spot_img

Latest Articles

- Advertisement -spot_img