Tuesday, June 28, 2022
spot_img

8 ماہ میںکاروں کی 96 ہزار 139 یونٹس تک ریکارڈ فروخت

پاکستان میں رواں سال 28 فروری تک کار فنانسنگ اب تک کی بلند ترین سطح 2 کھرب 73 ارب روپے تک پہنچ گئی۔یہ بات عارف حبیب لمیٹڈ میں ہیڈ آف ریسرچ طاہر عباس نے اسٹیٹ بینک کے اعداد و شمار کا حوالہ دیتے ہوئے بتائی۔انہوں نے کہا کہ کاروں کی مجموعی فروخت میں آٹو فنانسنگ کا حصہ 40 سے 50 فیصد ہوگیا ہے جو گزشتہ برس مارچ میں جب شرح سود 13.5 فیصد تھی تو یہ حصہ 20 سے 30 فیصد تھا۔انہوں نے کہا کہ اسٹیٹ بینک کی جانب سے جاری ہونے والے مانیٹری پالیسی کے بیان میں کسی قسم کی تبدیلی کی توقع نہیں کررہے جو آٹو سیکٹر کے لیے اچھی علامت ہوگی۔ان کا مزید کہنا تھا کہ کاروں کی بڑھتی ہوئی طلب کے باعث میں مالی سال 2021 میں کاروں کی فروخت میں 16 سے 20 فیصد کی شرح نمو کی توقع رکھتا ہوں۔ان کا کہنا تھا کہ مارچ تا مئی 2020 میں ملک بھر میں شٹ ڈاؤن کے مقابلے اب تک لاک ڈاؤن کی صورتحال خاصی بہتر ہے۔انہوں نے یہ بات دہرائی کہ کم پالیسی ریٹ نے کاروں کی فروخت میں اضافے میں مدد کی اور رواں مالی سال کے ابتدائی 7 ماہ کے دوران آٹو فنانسنگ 51 ارب روپے تک جا پہنچی۔
پاکستان آٹو موٹیو مینوفیکچررز ایسوسی ایشن(پی اے ایم اے) کے اعداد و شمار کے مطابق مالی سال 2021 کے 8 ماہ کے دوران کاروں کی فروخت 96 ہزار 139 یونٹس تک بڑھ گئی جبکہ گزشتہ برس اسی عرصے کے دوران بلند قیمتوں کے باوجود 79 ہزار 534 گاڑیاں فروخت ہوئی تھیں۔تاہم کار اسمبلرز کی بڑی تعداد اب بھی مسائل کا سامنا کررہی ہے جس کی وجہ بندرگاہوں سامان کا پھنسا ہے جس کی باعث خام مال کی سپلائی چین متاثر ہورہی ہے۔

Advertisementspot_img

Related Articles

Stay Connected

147,135FansLike
8,890FollowersFollow
1,236SubscribersSubscribe
- Advertisement -spot_img

Latest Articles

- Advertisement -spot_img