Tuesday, June 28, 2022
spot_img

کورونا سے موت کا منفرد کیس، ماہرین سر پکڑ کر بیٹھ گئے

کورونا کی دو مختلف اقسام سے متاثرہ عمررسیدہ خاتون کی موت نے سائنسدانوں اور محققین ‏کو سٹ پٹانے پر مجبور کر دیا۔

کورونا کی نت نئی اقسام سامنے آنے پر ریسرچرز پہلے ہی پریشان تھے کہ اب دو مختلف اقسام ‏ایک ہی انسانی جسم میں پائے جانے پر وہ چکرا کر رہ گئے ہیں۔

غیرملکی میڈیا رپورٹس کے مطابق بیلجیئم سے تعلق رکھنے والی 90 سالہ خاتون کی کرونا وائرس کی دو اقسام سے متاثر ہونے کے باعث موت ہوگئی، جس نے سائنسدانوں کو فکر میں مبتلا کردیا ہے کہ کویوڈ کی الگ الگ قسم سے متاثرہ شخص پر ویکسین کتنی اثر انداز ہوگی۔

سائنس دانوں کا کہنا ہے کہ 90 سالہ خاتون برطانوی قسم الفا اور جنوبی افریقی قسم بیٹا ویریئنٹ سے متاثر ہوئیں تھی، جس کے باعث یہ شبہ ظاہر ہوتا ہے کہ انہیں دو الگ الگ لوگوں سے وائرس منتقل ہوا۔

90 سالہ خاتون کا معاملہ سامنے آنے کے بعد ڈبل انفیکشن کو لے کر کئی طرح کے سوالات کھڑے ہوئے ہیں اور ساتھ ہی ویکسین سے متعلق بھی تحقیق شروع ہوگئی ہے۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق خاتون کی موت مارچ میں ہوئی تھی، وہ اپنے گھر میں اکیلی رہتی تھیں اور جب انہیں اسپتال منتقل کیا گیا تو ان کی حالت ٹھیک تھی لیکن پانچ روز بعد خاتون کی حالت انتہائی تشویشناک ہوگئی اور انہیں سانس لینے میں شدید دشواری ہورہی تھی۔

خاتون کا سانس کی تکلیف کے باعث ٹیسٹ کیا گیا تو پتہ چلا کہ خاتون کو کرونا کی دو اقسام سے متاثر ہیں۔

غیر ملکی میڈیا کے مطابق بیلجیئم میں ان دنوں یہ دونوں (الفا اور بیٹا) پھیل رہے تھے، ممکن ہے کہ خاتون کو دو الگ الگ لوگوں سے الگ الگ وائرس کا انفیکشن ہوا ہو۔

Advertisementspot_img

Related Articles

Stay Connected

147,135FansLike
8,890FollowersFollow
1,236SubscribersSubscribe
- Advertisement -spot_img

Latest Articles

- Advertisement -spot_img